ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Nishat-1 حادثے سے بال بال بچ گیا.    Newly posted SSPs in Punjab police visit PSCA, PPIC3.    "  لڑکیاں صرف ماں کی کوکھ یا پھر قبر میں محفوظ ہیں" طالبہ نے خودکشی کر لی.    "میں ناگن، تو سپیرا " پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل.    "منی ہائسٹ "(Money Heist )کاآخری حصہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ریلیز کیا جائے گا.    NA-133 کا ضمنی انتخاب.    NA-133 ضمنی انتخاب.    NCA میں "دی سندھو پراجیکٹ اینگما آف روٹس " کے عنوان سے فن پاروں کی نمائش.    KIPS-CSS کی جانب سے CSSمیں کامیاب امیدواروں کے اعزاز میں عشائیہ.    NCA میں ٹریڈیشنل آرٹ کورسز ورکشاپ کی اختتامی تقریب.    NA-75 الیکشن کمیشن کی رپورٹ پر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ردعمل.    NA-133 ضمنی انتخاب : جمشید اقبال چیمہ کی اپیلوں پر الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ جاری.   

ریسکیو 1122 نے ٹیلی کمیونی کیٹرسی پی آرکا آغاز کر دیا

ویب ڈیسک
02 Jul, 2022

02 جولائی ، 2022

ویب ڈیسک
02 Jul, 2022

02 جولائی ، 2022

ریسکیو 1122 نے ٹیلی کمیونی کیٹرسی پی آرکا آغاز کر دیا

post-title

لاہور: (اے پی این این ) ٹیلی فون کے ذریعے دل اور سانس کی بحالی کی ورکشاپ کا انعقاد ایمرجنسی سروسزاکیڈمی میں آغا خان یونیورسٹی کراچی اور امریکن ری سسی ٹیشن فاؤنڈیشن کے تعاون سے کیا گیا۔

 جس میں ایمبولینس کے جائے حادثہ پر پہنچنے سے پہلے کالر کو ٹیلی فون کے ذریعے سی پی آر کرنے کی راہنمائی دی جائے گی یہ ٹرینگ ایمرجنسی کے شکار مریضوں جن میں دل کی دھڑکن بند ہونے والے مریض،ڈوبنے اور الیکٹرک شاک وغیرہ کے مریض شامل ہیں کی زندگیاں بچانے کے امکانات کو بڑھادے گا۔    

ان خیالات کا اظہار ڈائریکٹر جنرل پنجاب ایمرجنسی سروس ڈیپارٹمنٹ ڈاکٹر رضوان نے گزشتہ روزایمرجنسی سروسزاکیڈمی میں ہونے والی تربیتی ورکشاپ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ڈین آغا خان یونیورسٹی میڈیکل کالج ڈاکٹر عادل حیدر،پروگرام ڈائریکٹر ٹیلی سی پی آر مس جولی،ایگزیکٹو ڈائریکٹرری سسی ٹیشن اکیڈمی فاؤنڈیشن مس این ڈول، ڈائریکٹر آغاء خان یونیورسٹی ڈاکٹر جنید رازق نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے پاکستان میں پہلی دفعہ ٹیلی سی پی آر شروع کرنے پر پنجاب ایمرجنسی سروس ڈیپارٹمنٹ کی کاوشوں کو سراہا۔ٹیلی سی پی آر ورکشاپ  میں رجسٹرار اکیڈمی ڈاکٹر فرحان خالد، ہیڈ آف کمیونیٹی سیفٹی اینڈ انفارمیشن مس دیبا شہناز، کنٹرولر امتحانات مس رقیہ بانو جاوید، ریسکیو ہیڈ کواٹرز و اکیڈمی کے افسران اور پنجاب کے تمام ضلعی کنٹرول روم انچارج شریک ہوئے۔

 ڈاکٹر رضوان نصیر نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب ایمرجنسی سروس 2004 سے اب تک 10 ملین سے زائد ایمرجنسی کالز پر ریسکیو سروسز فراہم کر چکی ہے اور ریسکیو سروس روزانہ 4 ہزار ایمر جنسی کالز پر ریسپانڈکرتی ہے۔ انہوں نے کنٹرول روم میں تربیت یافتہ ریسکیو ڈسپیچر کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اس  ورکشاپ کا انعقاد ریسکیو1122 ہیلپ لائن کے کال ایجنٹس کو ٹیلی سی پی آر کی تربیت فراہم کرنے کیلئے  کیا گیا ہے اور یہی کنٹرول روم انچارج اپنے متعلقہ اضلاع میں ہیلپ لائین کے کال ایجنٹس کو ٹیلی سی پی آرکی تربیت فراہم کر یں گے۔ تاکہ ایمبولینس کے پہنچنے سے پہلے دل کی دھڑکن بند ہونے کی صورت میں کالر کو ریسکیو ڈسپیچر سی پی آر کرنے کی رہنمائی فراہم کر سکے اور یہ عمل یقینی طور پر دل کے مریضوں کی زندگی بچانے میں انتہائی اہم ثابت ہو گا۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ اس تربیت کی بدولت کنٹرول روم انچارجز کی صلاحیتوں میں مزید نکھار پیدا ہوگا اوروہ اپنے متعلقہ اضلاع میں کنٹرول روم ڈسپیچرز کو یہی تربیت فراہم کریں گے تاکہ کال ایجنٹس بروقت شہریوں کی راہنمائی کر سکیں۔ڈاکٹررضوان نصیر نے ایمرجنسی سروسزاکیڈمی میں جاری ایمرجنسی میڈیکل ٹیکنیشنز کے تربیتی پروگرام کوجانچنے،پاکستان لائف سیور پروگرام اور ٹیلی سی پی آر کی تربیتی ورکشاپ کے انعقاد پر خراج تحسین پیش کیا۔

اس موقع پر ڈی جی ریسکیو کو آگاہ کیا گیا کہ تمام اضلاع میں ٹیلی سی پی آرکی افادیت کو جانچنے کیلئے 3ماہ بعد ایک سروے کیا جائے گا۔ورکشاپ کے دوران کنٹرول روم انچارجز نے اپنے مقامی تجربات کے بارے بتایا اور اس پروگرام کے نفاذ کے سلسلے میں درپیش مختلف چیلنجز پر تفصیلی گفتگو کی۔قبل ازیں انسٹرکٹرز نے ٹیلی سی پی آر کی تربیتی ورکشاپ کے دوران لیکچرزدئے اور شرکاء کو  عملی مشقیں بھی کروائیں جبکہ ماسٹر ٹرینرز نے پاکستان میں ٹیلی سی پی آر پر عمل درآمد کی اہمیت،ٹیلی سی پی آر  کے تعارف اور اس پرعمل درآمد میں درپیش چیلنجز کے حوالے سے لیکچرزدیئے۔

 


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM