ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Nishat-1 حادثے سے بال بال بچ گیا.    Newly posted SSPs in Punjab police visit PSCA, PPIC3.    "  لڑکیاں صرف ماں کی کوکھ یا پھر قبر میں محفوظ ہیں" طالبہ نے خودکشی کر لی.    "میں ناگن، تو سپیرا " پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل.    "منی ہائسٹ "(Money Heist )کاآخری حصہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ریلیز کیا جائے گا.    NA-133 کا ضمنی انتخاب.    NA-133 ضمنی انتخاب.    NCA میں "دی سندھو پراجیکٹ اینگما آف روٹس " کے عنوان سے فن پاروں کی نمائش.    KIPS-CSS کی جانب سے CSSمیں کامیاب امیدواروں کے اعزاز میں عشائیہ.    NCA میں ٹریڈیشنل آرٹ کورسز ورکشاپ کی اختتامی تقریب.    NA-75 الیکشن کمیشن کی رپورٹ پر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ردعمل.    NA-133 ضمنی انتخاب : جمشید اقبال چیمہ کی اپیلوں پر الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ جاری.   

قرضے اگر بڑھے تو جی ڈی پی بھی بڑھی ہے : شوکت ترین

ویب ڈیسک
23 May, 2022

23 مئی ، 2022

ویب ڈیسک
23 May, 2022

23 مئی ، 2022

قرضے اگر بڑھے تو جی ڈی پی بھی بڑھی ہے : شوکت ترین

post-title

اسلام آباد: سابق وزیر خزانہ شوکت ترین نے وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کے الزامات پر رد عمل کا اظہار  کیا ہے۔

ایک بیان میںان کا کہنا تھا شوکت ترین  نے حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ حواس باختہ ہوگئے ہیں ، ان کو سمجھ ہی نہیں آرہی کہ معیشت کیسے چلائیں۔

شوکت ترین نے کہا ہے کہ عالمی سطح پر پیٹرول بڑھ رہاتھا لیکن پھر بھی ہم نےکم قیمت بڑھائی، جب ہم پیٹرول کی قیمت بڑھاتے تھے تو یہ ہم پر تنقید کرتے تھے، یہ کہتے ہیں کہ ہم معیشت خراب چھوڑ کر گئے لیکن اعداد و شمارتو کچھ اور بتارہے ہیں، ہم نے روز گار کے مواقع پیدا کیے اور  زرعی پیداوار بہتر کی۔

ان کا کہنا تھا کہ قرضے اگر بڑھے تو جی ڈی پی بھی بڑھی ہے، ہم پیسے دے کر گئے تھے لیکن یہ قبول نہیں کریں گے، انہوں نے آئی ایم ایف سے وعدہ کیاہےکہ سبسڈی کم کردیں گے۔

شوکت ترین نے سوال  کیا کہ پہلے تو انہیں بارودی سرنگ نظر نہیں آتی تھی، اب کیوں آرہی ہے؟ ان کی تو 13پارٹیز کی حکومت ہے اور 2 وزیر خزانہ ہیں،  انہوں نے دس سال میں کچھ نہیں کیا، یہ بیڑا غرق کرکے گئے تھے، ہم ٹھیک کررہے تھے۔ 

سابق وزیر خزانہ نے مزید کہا کہ یہ لوگوں کو بے وقوف بنانے کی کوشش نہ کریں، انہوں نے آئی ایم ایف سے وعدہ کیاکہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھا دیں گے، پیٹرول دیگر ممالک سے ہمارے یہاں سے زیادہ مہنگا تھا اس  لیے سبسڈی دینے کےلیے ہم نے فنڈز مختص کیے تھے۔


 


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM