ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Nishat-1 حادثے سے بال بال بچ گیا.    Newly posted SSPs in Punjab police visit PSCA, PPIC3.    "  لڑکیاں صرف ماں کی کوکھ یا پھر قبر میں محفوظ ہیں" طالبہ نے خودکشی کر لی.    "میں ناگن، تو سپیرا " پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل.    "منی ہائسٹ "(Money Heist )کاآخری حصہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ریلیز کیا جائے گا.    NA-133 کا ضمنی انتخاب.    NA-133 ضمنی انتخاب.    NCA میں "دی سندھو پراجیکٹ اینگما آف روٹس " کے عنوان سے فن پاروں کی نمائش.    KIPS-CSS کی جانب سے CSSمیں کامیاب امیدواروں کے اعزاز میں عشائیہ.    NCA میں ٹریڈیشنل آرٹ کورسز ورکشاپ کی اختتامی تقریب.    NA-75 الیکشن کمیشن کی رپورٹ پر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ردعمل.    NA-133 ضمنی انتخاب : جمشید اقبال چیمہ کی اپیلوں پر الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ جاری.   

کمزور اور طاقتور کیلئے الگ، الگ قانون ہونے سے قومیں تباہ ہوجاتی ہیں، وزیراعظم

ویب ڈیسک
02 Jan, 2022

02 جنوری ، 2022

ویب ڈیسک
02 Jan, 2022

02 جنوری ، 2022

کمزور اور طاقتور کیلئے الگ، الگ قانون ہونے سے قومیں تباہ ہوجاتی ہیں، وزیراعظم

post-title

وزیر اعظم عمران خان نے عالمی اسلامی اسکالرز سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ انصاف اور قانون کی حکمرانی سے ہی قومیں ترقی کرتی ہیں، ہم نبی ﷺ کے پیروکار ہیں، نبی کریم ﷺ نے لوگوں کے اخلاقی معیار کو بلند کیا، کئی قومیں تباہ ہوئیں کیونکہ کمزور اور طاقتور کے لیے الگ الگ قانون تھا، نبی کریمﷺنے فرمایا کہ اگر میری بیٹی فاطمہ رضی اللہ عنہا بھی کوئی جرم کریںگی تو انہیں بھی قانون کے مطابق سزا ملے گی۔
وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ہمارے نبی ﷺ نے فرمایا کہ گزشتہ قومیں تباہ ہوئیں کیونکہ جب کوئی کمزور جرم کرتا تو اس کو سزا دی جاتی مگر جب کوئی امیر اور طاقتور شخص جرم کرتا تو اس کو معاف کردیا جاتا تھا، امیر اور غریب کے لیے، کمزور اور طاقتور کے لیے الگ الگ قانون ہونے سے قومیں تباہ ہوجاتی ہیں۔
   وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ آج تک انہی معاشروں اور ملکوں نے ترقی کی جہاں قانون اور انصاف کی حکمرانی ہے، غریب اور امیر ، کمزور اور طاقتورپر قانون کایکساں اطلاق کرنے والے معاشرے ہی پھلتے پھولتے ہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ نبی کریم ﷺ نے لوگوں کی سیرت کو بہتر بنایا، ریاست مدینہ میں لوگوں کے اخلاقی معیار کو بلند کیا گیا، تبھی ایک فلاحی معاشرہ تشکیل پایا۔
عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم نبی کریم ﷺ کے پیروکار ہیں، ہمیں آپ ﷺ کی سیرت کی پیروی کرنی چاہیے، انسانی معاشرہ سیرت النبی ﷺ کی پیروی کرے گا تو ہی ترقی کرے گا، نبی کریم ﷺ کے اسوۃ حسنہ اور سیرت پر عمل کرنا ہی ترقی، خوشحالی اور فلاح کا راستہ ہے۔
نہوں نے کہا کہ آج تک ان ہی معاشروں اور ملکوں نے ترقی کی جہاں قانون اور انصاف کی حکمرانی ہے اور جن ممالک نے غریب اور امیر، کمزور اور طاقتور پر قانون کا یکساں اطلاق کیا، صرف وہی معاشرے پھلتے پھولتے ہیں جہاں قانون کی حکمرانی ہو۔
 


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM