ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Nishat-1 حادثے سے بال بال بچ گیا.    Newly posted SSPs in Punjab police visit PSCA, PPIC3.    "  لڑکیاں صرف ماں کی کوکھ یا پھر قبر میں محفوظ ہیں" طالبہ نے خودکشی کر لی.    "میں ناگن، تو سپیرا " پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل.    "منی ہائسٹ "(Money Heist )کاآخری حصہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ریلیز کیا جائے گا.    NA-133 کا ضمنی انتخاب.    NA-133 ضمنی انتخاب.    NCA میں "دی سندھو پراجیکٹ اینگما آف روٹس " کے عنوان سے فن پاروں کی نمائش.    KIPS-CSS کی جانب سے CSSمیں کامیاب امیدواروں کے اعزاز میں عشائیہ.    NCA میں ٹریڈیشنل آرٹ کورسز ورکشاپ کی اختتامی تقریب.    NA-75 الیکشن کمیشن کی رپورٹ پر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ردعمل.   

ہراسانی کیس: سپریم کورٹ نے میشا شفیع کو بذریعہ ویڈیو لنک جرح کی اجازت دیدی

ویب ڈیسک
21 Nov, 2022

21 نومبر ، 2022

ویب ڈیسک
21 Nov, 2022

21 نومبر ، 2022

ہراسانی کیس: سپریم کورٹ نے میشا شفیع کو بذریعہ ویڈیو لنک جرح کی اجازت دیدی

post-title

 اسلام آباد: سپریم کورٹ نے گلوکار علی ظفر کے خلاف ہراسانی کے کیس میں گلوکارہ میشا شفیع کو کینیڈا سےبذریعہ ویڈیو لنک جرح کی اجازت دے دی۔

 سپریم کورٹ کے جسٹس منصورعلی شاہ نے میشا شفیع کی درخواست منظورکرنے کا تحریری حکم نامہ جاری کردیا۔

 عدالت کی جانب سے جاری کردہ حکم نامے کے مطابق میشا شفیع نےکینیڈا میں مقیم ہونے پربذریعہ ویڈیو لنک جرح کی درخواست کی تھی، میشا شفیع 2016 سے کینیڈا میں مقیم ہیں،2 بچوں کی والدہ بھی ہیں۔

 عدالت نے کہا کہ میشا شفیع کو محض ایک بیان ریکارڈنگ کے لیے پاکستان آنے کی ضرورت نہیں ہے،انہیں جرح کےلیے کینیڈا میں پاکستانی سفارتخانہ جانےکی بھی ضرورت نہیں۔

 سپریم کورٹ نے کہا کہ پچھلے 8 ماہ سے میشا شفیع سے جرح ہورہی ہے، بدقسمتی سے جرح میں تاخیری حربوں سے متاثرہ فریق پردباؤ ڈال کربیان بدلوانے کی کوشش کی جاتی ہے، جرح کے دوران جج کو خاموش تماشائی بن کر نہیں بیٹھنا چاہیے، جج اگرمحسوس کرے کہ جرح کا حق غلط استعمال ہورہا ہے تو اسے مداخلت کرنی چاہیے۔

 حکم نامے میں کہا گیا کہ میشا شفیع جنسی ہراسانی کیس میں ان کا بیان اہمیت کا حامل ہے، عدالت میں بیان ریکارڈنگ کے لیے ورچوئل موجودگی بھی کافی ہے۔

 عدالتی حکم نامے میں مزید کہا گیا کہ یہ بہترین وقت ہے کہ عدالتوں میں جدید ٹیکنالوجی کا استعمال شروع ہو۔


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM