ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Nishat-1 حادثے سے بال بال بچ گیا.    Newly posted SSPs in Punjab police visit PSCA, PPIC3.    "  لڑکیاں صرف ماں کی کوکھ یا پھر قبر میں محفوظ ہیں" طالبہ نے خودکشی کر لی.    "میں ناگن، تو سپیرا " پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل.    "منی ہائسٹ "(Money Heist )کاآخری حصہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ریلیز کیا جائے گا.    NA-133 کا ضمنی انتخاب.    NA-133 ضمنی انتخاب.    NCA میں "دی سندھو پراجیکٹ اینگما آف روٹس " کے عنوان سے فن پاروں کی نمائش.    KIPS-CSS کی جانب سے CSSمیں کامیاب امیدواروں کے اعزاز میں عشائیہ.    NCA میں ٹریڈیشنل آرٹ کورسز ورکشاپ کی اختتامی تقریب.    NA-75 الیکشن کمیشن کی رپورٹ پر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ردعمل.    NA-133 ضمنی انتخاب : جمشید اقبال چیمہ کی اپیلوں پر الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ جاری.   

75 سال بعد دو بھائیوں کی ملاقات،عمران خان سے ویزے کی اپیل

مسرت ثمینہ
15 Jan, 2022

15 جنوری ، 2022

مسرت ثمینہ
15 Jan, 2022

15 جنوری ، 2022

75 سال بعد دو بھائیوں کی ملاقات،عمران خان سے ویزے کی اپیل

post-title

’عمران خان سے کہو نا مجھے ویزہ دے، انڈیا میں میرا کوئی نہیں ہے۔’’تم پاکستان آؤ میں تمہاری شادی کرواتا ہوں۔’یہ دو بھائیوں کی گفتگو ہے جو پاکستان کی آزادی کے بعد اب پہلی بار ملے ہیں۔
تفصیلات کے مطابق محمد صدیق اور محمد حبیب کی کہانی ان لاکھوں افراد جیسی ہے جن کے لیے تقسیم اور آزادی کے بعد ہونے والا بٹوارہ صرف ایک کہانی نہیں۔ وہ اس کہانی کے ایسے کردار ہیں جو اس وقت بچھڑ گئے تھے جب جالندھر سے افراتفری میں ان کا خاندان پاکستان روانہ ہوا۔ ان کے والد ہلاک ہو گئے۔ صدیق اپنی بہن کے ساتھ پاکستان پہنچ گئے۔ حبیب والدہ کے ساتھ وہیں رہ گئے جن کا بعد میں انتقال ہو گیا۔
یہ سب کیسے ہوا انھیں آج بھی پوری طرح یاد نہیں۔ لیکن تقریباً 75 سال بعد دونوں بھائیوں کی کرتارپور کے ذریعے ملاقات ایسی ان گنت کہانیوں میں سے ہے جن کا آغاز تقسیم سے ہوا۔‘عمران خان سے کہتا ہوں کہ وہ بچھڑے ہوئے بھائیوں کو ملانے کے لیے میرے بھائی محمد حبیب کو پاکستان کا ویزا دے دے۔ زندگی کی آخری سانسیں ہم اکھٹے گزار لیں تو شاید ماں باپ، بہن بھائیوں سے بچھڑنے کا دکھ کچھ کم ہو سکے۔‘
یہ کہنا تھا پنجاب کے ضلع فیصل آباد کے چک 255 کے رہائشی محمد صدیق کا،کرتار پور میں ان کی ملاقات کے عینی شاہد ناصر ڈھلوں کہتے ہیں کہ دونوں بھائیوں کی ملاقات انتہائی جذباتی تھی، اس ملاقات کے موقع پر کوئی سو کے قریب لوگ موجود تھےسب کی آنکھوں میں خوشی کے آنسو تھے۔ چند گھنٹوں کی ملاقات کے بعد جب بھائی ایک بار پھر جدا ہو رہے تھے تو ہر آنکھ ایک بار پھر بھیگ چکی تھی۔
محمد حبیب اپنے بھائی محمد صدیق کو کہہ رہے تھے کہ ‘عمران خان سے کہو نا مجھے ویزا دے۔ انڈیا میں میرا کوئی نہیں ہے، عمر کے اس حصے میں بہت تنہا ہو چکا ہوں اب زندگی اتنے اکیلے پن میں نہیں گزاری جاتی۔‘
دونوں بھائیوں کے درمیان کئی برسوں بعد پہلا رابطہ دو سال قبل ہوا تھا، دو سال سے کوئی دن ایسا نہیں جاتا کہ دونوں بھائی آپس میں ویڈیو کال نہ کرتے ہوں۔ محمد صدیق موبائل فون استعمال نہیں کر سکتے مگر ان کے بچے اور گاؤں کے لوگ اس معاملے میں ان کی مدد کرتے ہیں۔
 


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM