ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Nishat-1 حادثے سے بال بال بچ گیا.    Newly posted SSPs in Punjab police visit PSCA, PPIC3.    "  لڑکیاں صرف ماں کی کوکھ یا پھر قبر میں محفوظ ہیں" طالبہ نے خودکشی کر لی.    "میں ناگن، تو سپیرا " پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل.    "منی ہائسٹ "(Money Heist )کاآخری حصہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ریلیز کیا جائے گا.    NA-133 کا ضمنی انتخاب.    NA-133 ضمنی انتخاب.    NCA میں "دی سندھو پراجیکٹ اینگما آف روٹس " کے عنوان سے فن پاروں کی نمائش.    KIPS-CSS کی جانب سے CSSمیں کامیاب امیدواروں کے اعزاز میں عشائیہ.    NCA میں ٹریڈیشنل آرٹ کورسز ورکشاپ کی اختتامی تقریب.    NA-75 الیکشن کمیشن کی رپورٹ پر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ردعمل.    NA-133 ضمنی انتخاب : جمشید اقبال چیمہ کی اپیلوں پر الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ جاری.   

چینی ٹینس اسٹارکا نائب وزیراعظم پر ہراسانی کا الزام: یو ٹرن لے لیا

مسرت ثمینہ
07 Feb, 2022

07 فروری ، 2022

مسرت ثمینہ
07 Feb, 2022

07 فروری ، 2022

چینی ٹینس اسٹارکا نائب وزیراعظم پر ہراسانی کا الزام: یو ٹرن لے لیا

post-title

چین میں جاری سرمائی اولمپکس میں فرانسیسی اخبار کو دیے گئے اپنے انٹرویو میں پینگ شوائی نے کہا کہ سوشل میڈیا پر ڈالی گئی ان کی پوسٹ بہت بڑی غلط فہمی تھی، میں چین میں مکمل طور پر آزادانہ اور نارمل زندگی گزار رہی ہوں۔
تفصیلات کے مطابق چین کے سابق نائب وزیراعظم ژانگ گاولی پر زبردستی جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام لگانے والی ٹینس اسٹار پینگ شوئی نے سوشل میڈیا پر ڈالی گئی اپنی پوسٹ کے حوالے سے بڑا یوٹرن لے لیا۔تاہم برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کا اس حوالے سے دعویٰ ہے کہ فرانسیسی اخبار کو انٹرویو کے لیے پہلے سے سوالات دینے پر مجبور کیا گیا اور پینگ شوائی کا انٹرویو چینی اولمپکس کمیٹی کے نمائندوں کی موجودگی میں لیا گیا جس میں ٹینس اسٹار نے وہی مؤقف اختیار کیا جو چینی حکام کا تھا۔
یاد رہے کہ چین کی ٹینس اسٹار پینگ شوئی نے سابق چینی نائب وزیراعظم ژانگ گاولی پر 2 نومبر کو جنسی ہراسانی کا الزام عائد کیا تھا۔ٹینس اسٹار نے 1600 الفاظ پر مشتمل طویل پوسٹ سوشل میڈیا پر شیئر کرنے کے ایک گھنٹے بعد ہٹا دی تھی تاہم اس دوران پینگ شوائی کی پوسٹ جنگل میں آگ کی طرح پھیل چکی تھی۔
اس معاملے کے بعد چینی ٹینس اسٹار کئی ہفتے منظر عام سے غائب رہیں جس پر انٹرنیشنل اولمپکس کمیٹی اور انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے اداروں نے بھی تشویش کا اظہار کیا تھا۔
 


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM