ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Nishat-1 حادثے سے بال بال بچ گیا.    Newly posted SSPs in Punjab police visit PSCA, PPIC3.    "  لڑکیاں صرف ماں کی کوکھ یا پھر قبر میں محفوظ ہیں" طالبہ نے خودکشی کر لی.    "میں ناگن، تو سپیرا " پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل.    "منی ہائسٹ "(Money Heist )کاآخری حصہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ریلیز کیا جائے گا.    NA-133 کا ضمنی انتخاب.    NA-133 ضمنی انتخاب.    NCA میں "دی سندھو پراجیکٹ اینگما آف روٹس " کے عنوان سے فن پاروں کی نمائش.    KIPS-CSS کی جانب سے CSSمیں کامیاب امیدواروں کے اعزاز میں عشائیہ.    NCA میں ٹریڈیشنل آرٹ کورسز ورکشاپ کی اختتامی تقریب.    NA-75 الیکشن کمیشن کی رپورٹ پر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ردعمل.    NA-133 ضمنی انتخاب : جمشید اقبال چیمہ کی اپیلوں پر الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ جاری.   

پرائیویٹ سکول سے لڑکے اور لڑکی کی ڈیڈ باڈیز برآمد

راجوشہزاد
22 Jun, 2022

22 جون ، 2022

راجوشہزاد
22 Jun, 2022

22 جون ، 2022

پرائیویٹ سکول سے لڑکے اور لڑکی کی ڈیڈ باڈیز برآمد

post-title


قصور: (اے پی این این )  پرائیویٹ سکول سے لڑکے اور لڑکی کی ڈیڈ باڈیز ملنے کا معاملہ ،15 کی اطلاع پر مقامی پولیس فوری موقعہ پر پہنچی اور جائے وقوعہ سے پسٹل قبضہ  پولیس میں لیا۔

 ڈی پی او قصور صہیب اشرف نے نوٹس لیتے ہوئے ایس پی انویسٹی گیشن عبدالوہاب کے ہمراہ جائے وقوعہ کا دورہ کیا۔ کرائم سین یونٹ اور فرانزک ٹیموں کو شواہد اکٹھے کرنے کیلیے طلب کر لیا گیا ہے۔

 لڑکے کی شناخت علی شان ولد عبدالرشید سکنہ شیخ عماد بعمر 24 سال سے ہوئی ۔ علی شان پرائیویٹ سکول میں بطور سکیورٹی گارڈ تعینات تھا جبکہ لڑکی کی شناخت تاحال جاری ہے۔

 لڑکی کی شناخت کیلئے سکول انتظامیہ اور علی شان کے ورثا سے پوچھ گچھ جاری ہے۔ قتل یا خود کشی کی واردات کو ٹریس کرنے کیلئے سی سی ٹی وی کیمروں کی فوٹیج بھی حاصل کی جارہی ہیں۔ قانونی کاروائی عمل میں لائی جا رہی ہے اور ڈیڈ باڈیز کو پوسٹ مارٹم کے لیے ڈی ایچ کیو ہسپتال منتقل کردیاہے۔

وا ضح رہے کہ قصور کی عوام میں اس خونی واردات پر غم وغصہ پایا جاتا ہے۔
 قصور کے ایک بہت بڑے تعلیمی ادارے جسے تعلیمی برانڈ سمجھا جاتا ہے میں لوگ بھاری بھر کم فیس د ے کر ،سفارشیں کروا کر اپنے بچوں کو داخل کرواتے ہیں تاکہ ان کے بچے ان سکولوں سے تعلیم حاصل کر کے اعلی عہدوں پر فائز ہوں گے۔

 لیکن اندر سے یہ کس قدر کمزور ہیں ان کا انتظامی ڈھانچہ اور سکیورٹی کس قدر ناقص ہے، اس کا پول آج کی ہونے والی واردات میں کھل گیا ہے۔ قصور کے علاقے کھارا میں  نجی سکول کی نئی برانچ کھو لی گئی جہاں پر آج سکول کے گارڈ اور ایک لڑکی کا اندھا قتل کیا گیا۔

 سکول کا گارڈ جس کی عمر بمشکل 25  سال جبکہ لڑکی کی عمر 22 سال بتائی جاتی ہیں دونوں کو سکول کے اندر گولیاں مار کر قتل کیا گیا ہے ۔یہ واردات قتل کی ہے یا خودکشی یہ تو پولیس کی تفتیش میں آگے چل کر پتہ چلے گا کیونکہ لاشوں کے پاس سے پولیس کو ایک پسٹل بھی ملا ہے ۔پولیس ہر اینگل سے اس کیس پر تفتیش کر رہی ہے ۔ملزم جو کوئی بھی ہے آج نہیں تو کل پکڑا جاے گا

لیکن کچھ سوالات ہیں جو اس سکول سے مہنگے داموں تعلیم حاصل کر رہے ہیں ان کی سکیورٹی کے لئیے

1۔ کیا اتنے بڑے نام والے سکول کو صرف ایک گارڈ کے ہی سپرد کیا گیا تھا ؟

2۔کیا مہنگے سکول میں سی سی ٹی وی کیمروں کا کوئی انتظام نہیں تھا ؟؟
3۔  اگر کیمرے تھے تو گارڈ پر مشکوک حرکتیں نوٹ نہیں کی گئیں تھیں ؟؟؟

4۔سکول انتظامیہ چھٹیوں کی بھی فیس وصول کرتی ہے تو انتظامیہ روزانہ سکول کیوں نہیں آتی تھی؟ 5۔بھاری بھرکم فیسیں وصول کرنے والے اس ادارے کی سکیورٹی اور چیک اینڈ بیلنس رکھنا کس کی ذمہ داری تھی ؟
6۔کیا سکول انتظامیہ اس واردات کے بعد والدین کا اعتماد بحال کر پائےگی؟

7۔کیا دہرے قتل کی واردات سے اس ادارے میں پڑھنے آنے والے بچوں کے دل میں خوف پیدا نہیں ہوا ہو گا ۔کیا وہ زہنی طور پر ڈسٹرب نہیں ہوں گے کہ جہاں وہ علم حاصل کرنے جاتے تھے وہاں کیا ہوا؟

8۔کیا انتظامیہ اس واردات پر بچوں اور والدین سے معذرت کریں گے ؟

9۔ کیا اس بڑے نام والے تعلیمی ادارے کی ساکھ پھر سے بحال ہو سکے گی؟

10۔ کیا سکول انتظامیہ اتنے بڑے سکول کو صرف ایک گارڈ کے حوالے کرکے مطمئن تھی ؟

ان سوالات کا جواب سکول انتظامیہ کے پاس نہیں ہو گاتو اس سکول پر اعتماد بحال ہوتے ہوتے بڑا عرصہ لگے گا

 


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM