ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Nishat-1 حادثے سے بال بال بچ گیا.    Newly posted SSPs in Punjab police visit PSCA, PPIC3.    "  لڑکیاں صرف ماں کی کوکھ یا پھر قبر میں محفوظ ہیں" طالبہ نے خودکشی کر لی.    "میں ناگن، تو سپیرا " پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل.    "منی ہائسٹ "(Money Heist )کاآخری حصہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ریلیز کیا جائے گا.    NA-133 کا ضمنی انتخاب.    NA-133 ضمنی انتخاب.    NCA میں "دی سندھو پراجیکٹ اینگما آف روٹس " کے عنوان سے فن پاروں کی نمائش.    KIPS-CSS کی جانب سے CSSمیں کامیاب امیدواروں کے اعزاز میں عشائیہ.    NCA میں ٹریڈیشنل آرٹ کورسز ورکشاپ کی اختتامی تقریب.    NA-75 الیکشن کمیشن کی رپورٹ پر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ردعمل.    NA-133 ضمنی انتخاب : جمشید اقبال چیمہ کی اپیلوں پر الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ جاری.   

انسان کو لگایا گیا سورکا دل کامیاب نہ ہوسکا :تحقیق

ویب ڈیسک
07 May, 2022

07 مئی ، 2022

ویب ڈیسک
07 May, 2022

07 مئی ، 2022

انسان کو لگایا گیا سورکا دل کامیاب نہ ہوسکا :تحقیق

post-title

میری لینڈ: (ویب ڈیسک) امریکی شہری ڈیوڈ بینٹ دنیا کے وہ پہلے انسان تھے جن میں سور کے دل کو لگایا گیا۔ اب ایک نئی تحقیق میں پتا چلا ہے کہ سور کے دل میں خطرناک وائرس موجود تھا۔ یہ سرجری میری لینڈ سکول آف میڈیسن میں کی گئی تھی۔

ڈاکٹروں کا دعویٰ تھا کہ ڈیوڈ بینٹ کی پیوند کاری کیلئے جس سور کا دل حاصل کیا گیا تھا، وہ صحت مند تھا اور کسی بھی قسم کے انفیکشن سے پاک ہونے کی تصدیق کے لئے اس کے تمام ضروری ٹیسٹ کئے گئے تھے۔ اس کے علاوہ اس کی پرورش جانوروں کو انفیکشن سے محفوظ رکھنے کے ایک مرکز میں کی گئی تھی۔

تاہم ایک تحقیق میں یہ چیز سامنے آئی ہے کہ سور دل کے میں ایک وائرس موجود تھا۔ سائنسدانوں کو زیادہ تشویش اس بات پر ہے کہ جانوروں کے اعضا کی انسانوں میں پیوند کاری سے کہیں انسان نئی قسم کی بیماریوں تو مبتلا نہیں ہو جائیں گے۔

57 سالہ ڈیوڈ بینٹ دل لگائے جانے کے بعد صرف دو ماہ ہی زندہ رہ سکا تھا۔ طبی ماہرین یہ جاننے کی کوشش کر رہے ہیں کہ دنیا کے اس پہلے انسان کی موت کی وجہ کیا تھی جسے سور کا دل لگایا گیا تھا اور اسے طبی تاریخ کا اہم کارنامہ قرار دیا گیا تھا۔

طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ اس چیز کے تعین کے لیے کہ آیا سور کے دل میں موجود وائرس ہی انفکشن کا سبب بنا تھا، مزید اور پیچیدہ نوعیت کے ٹیسٹ کئے جا رہے ہیں۔

خیال رہے کہ ڈاکٹر عشروں سے جانوروں کے اعضا کی پیوند کاری کے ذریعے انسانی زندگیاں بچانے کی کوششیں کر رہے ہیں، لیکن ابھی تک انہیں کامیابی نہیں مل سکی ہے۔

بینٹ جو اپنی بیماری کی وجہ سے موت کے منہ میں جا رہے تھے اور انہیں انسانی دل لگانا ممکن نہیں رہا تھا، آخری کوشش کے طور پر انہیں ایک ایسے سور کا دل لگایا گیا جس میں جینیاتی طور پر تبدیلی کی گئی تھی تاکہ نئے دل کے خلاف انسان کے قدرتی مدافعتی ردعمل کے خطرے کو ممکنہ حد تک کم کیا جا سکے۔

وائس آف امریکا کی رپورٹ کے مطابق اس وقت امریکا کے طبی مراکز میں ڈاکٹر عطیہ کئے گئے انسانی جسموں میں جانوروں کے اعضا کی پیوند کاری پر تجربات جاری رکھے ہوئے ہیں اور اس بارے میں بے چین ہیں کہ انہیں زندہ انسانوں پر تجربات کا موقع کب ملے گا؟۔ تاہم یہ واضح نہیں ہے کہ سور کے دل میں وائرس کی موجودگی کا حالیہ انکشاف اس پیش رفت کو کس طرح متاثر کرے گا۔
 


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM