ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Nishat-1 حادثے سے بال بال بچ گیا.    Newly posted SSPs in Punjab police visit PSCA, PPIC3.    "  لڑکیاں صرف ماں کی کوکھ یا پھر قبر میں محفوظ ہیں" طالبہ نے خودکشی کر لی.    "میں ناگن، تو سپیرا " پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل.    "منی ہائسٹ "(Money Heist )کاآخری حصہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ریلیز کیا جائے گا.    NA-133 کا ضمنی انتخاب.    NA-133 ضمنی انتخاب.    NCA میں "دی سندھو پراجیکٹ اینگما آف روٹس " کے عنوان سے فن پاروں کی نمائش.    KIPS-CSS کی جانب سے CSSمیں کامیاب امیدواروں کے اعزاز میں عشائیہ.    NCA میں ٹریڈیشنل آرٹ کورسز ورکشاپ کی اختتامی تقریب.    NA-75 الیکشن کمیشن کی رپورٹ پر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ردعمل.   

بھارتی دواؤں کے استعمال سے مبینہ طور پر 66 بچے ہلاک، عالمی ادارہ صحت نے الرٹ جاری کر دیا

ویب ڈیسک
07 Oct, 2022

07 اکتوبر ، 2022

ویب ڈیسک
07 Oct, 2022

07 اکتوبر ، 2022

بھارتی دواؤں کے استعمال سے مبینہ طور پر 66 بچے ہلاک، عالمی ادارہ صحت نے الرٹ جاری کر دیا

post-title

بھارتی کمپنی کے کھانسی کے شربت کے مبینہ استعمال سے افریقی ملک گیمبیا میں 66 بچے ہلاک ہوگئے  جس کے بعد عالمی ادارہ صحت نے الرٹ جاری کر دیا ہے۔

عالمی ادارہ صحت کی جانب سے زکام، بخار اور کھانسی کی چار بھارتی ادویات کو مضرِ صحت قرار دیا گیا ہے۔

66 بچوں کی ہلاکت نے دنیا کی فارمیسی کہلانے والے بھارت کی ساکھ کو شدید نقصان پہنچایا ہے۔

بھارتی حکام کے مطابق وہ عالمی ادارہ صحت کی رپورٹ کے منتظر ہیں، دستیاب معلومات کی بنیاد پر تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔

پرومیتھیزین، کوفکس میلن، میکاف اور میگرپ نامی یہ سیرپ عموماً بچوں کو تجویز کیے جاتے ہیں، گیمبیا نے بھارت کی ’میڈن فارماسیوٹیکل کمپنی‘ کی ان دواؤں کی درآمد روک دی ہے۔

عالمی ادارہ صحت نے اپنے الرٹ میں کہا ہے کہ ان دواؤں کے جن نمونوں کی جانچ کی گئی ہے اُن میں ایسے کیمیکلز پائے گئے ہیں جو گردوں کو ناکارہ بنا دیتے ہیں۔

عالمی ادارہ صحت کے مطابق یہ کیمیکلز  بریک فلوئڈز اور صنعتی آلات میں استعمال ہوتے ہیں اور بعض ادویات میں سستے متبادل کے طور پر شامل کیے جاتے ہیں۔


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM