ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Nishat-1 حادثے سے بال بال بچ گیا.    Newly posted SSPs in Punjab police visit PSCA, PPIC3.    "  لڑکیاں صرف ماں کی کوکھ یا پھر قبر میں محفوظ ہیں" طالبہ نے خودکشی کر لی.    "میں ناگن، تو سپیرا " پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل.    "منی ہائسٹ "(Money Heist )کاآخری حصہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ریلیز کیا جائے گا.    NA-133 کا ضمنی انتخاب.    NA-133 ضمنی انتخاب.    NCA میں "دی سندھو پراجیکٹ اینگما آف روٹس " کے عنوان سے فن پاروں کی نمائش.    KIPS-CSS کی جانب سے CSSمیں کامیاب امیدواروں کے اعزاز میں عشائیہ.    NCA میں ٹریڈیشنل آرٹ کورسز ورکشاپ کی اختتامی تقریب.    NA-75 الیکشن کمیشن کی رپورٹ پر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ردعمل.    NA-133 ضمنی انتخاب : جمشید اقبال چیمہ کی اپیلوں پر الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ جاری.   

افغانستان: خواتین اینکرز سے اظہار یکجہتی کیلئے مردوں نے بھی چہرہ چھپا لیا

ویب ڈیسک
24 May, 2022

24 مئی ، 2022

ویب ڈیسک
24 May, 2022

24 مئی ، 2022

افغانستان: خواتین اینکرز سے اظہار یکجہتی کیلئے مردوں نے بھی چہرہ چھپا لیا

post-title

افغانستان میں خواتین اینکرز سے اظہارِ یکجہتی کیلئے مرد میزبانوں نے بھی ماسک سے اپنا چہرہ چھپالیا۔

 تاہم گزشتہ روز افغانستان کے بڑے ٹی وی چینلز پر خواتین پریزینٹرز نے طالبان کے حکم نامے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اپنے چہروں کو ڈھانپے بغیر اسکرین پر پروگرام پیش کیے۔

طالبان  حکومت نے گزشتہ دنوں افغانستان میں ٹی وی نشریات کا حصہ بننے والی تمام خواتین کو شوز کے دوران چہرے کو نقاب سے ڈھانپنے کا حکم دیا۔

ذبیح اللہ مجاہد نے زور دیتے ہوئے تمام چینلز پر واضح کیا کہ خواتین کے لیے عبایا اور حجاب افغانستان کی ثقافت کا حصہ ہیں اور پردہ اسلامی شریعت کے لیے لازمی ہے، اگرچہ حکومت وقت نے ٹی وی میزبانوں کو چہرہ ڈھانپنے کا حکم دیا ہے لیکن ٹی وی میزبانوں کے لیے چہرہ اور ناک ڈھانپنا ضروری ہے جوکہ ماسک لگاکر بھی ڈھانپا جاسکتا ہے۔

بعد ازاں اس حوالے سے طالبان کا مؤقف بھی سامنے آیا جس میں افغانستان میں طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ’ العربیہ ‘ سے گفتگو کے دوران خواتین اینکرز کے بغیر حجاب شوز کرنے پر گفتگو کی۔

تاہم افغانستان کے بڑے نیوز چینل ٹولو نیوز نے طالبان کی جانب سے جاری حکم نامے پر عمل درآمد شروع کیا۔

دوسری جانب  خواتین اینکرز سے اظہار یکجہتی کیلئے مرد میزبانوں نے بھی اپنا چہرے  ماسک لگا کر چھپا لیا ۔

ٹولو نیوز کی خاتون اینکر  نے فرانسیسی خبررساں ایجنسی اے ایف پی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ہم نے طالبان کے فیصلے پرمزاحمت کی اور چہرے کو ڈھانپنے کے خلاف تھے لیکن ہمارے چینل پر دباؤ ڈالا گیا اور کہا گیا کہ کوئی بھی خاتون پریزنٹر جو چہرے کو ڈھانپے بغیر اسکرین پر نظر آئے اسے کوئی اور کام دیا جائے یا اسے ہٹا دیا جائے اس لیے ہمیں مجبوراً چہرہ ڈھانپنا پڑا۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق اتوار کے روز افغانستان کے  بڑے نیوز چینلز میں مرد اینکرز نے چہرے پر ماسک لگا کر نشریات کا آغاز کیا۔
 


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM