ارضِ پاک نیوز نیٹ ورک

Arz-e-Pakistan News Network

Language:

Search

Nishat-1 حادثے سے بال بال بچ گیا.    Newly posted SSPs in Punjab police visit PSCA, PPIC3.    "  لڑکیاں صرف ماں کی کوکھ یا پھر قبر میں محفوظ ہیں" طالبہ نے خودکشی کر لی.    "میں ناگن، تو سپیرا " پوسٹ سوشل میڈیا پر وائرل.    "منی ہائسٹ "(Money Heist )کاآخری حصہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج ریلیز کیا جائے گا.    NA-133 کا ضمنی انتخاب.    NA-133 ضمنی انتخاب.    NCA میں "دی سندھو پراجیکٹ اینگما آف روٹس " کے عنوان سے فن پاروں کی نمائش.    KIPS-CSS کی جانب سے CSSمیں کامیاب امیدواروں کے اعزاز میں عشائیہ.    NCA میں ٹریڈیشنل آرٹ کورسز ورکشاپ کی اختتامی تقریب.    NA-75 الیکشن کمیشن کی رپورٹ پر ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا ردعمل.    NA-133 ضمنی انتخاب : جمشید اقبال چیمہ کی اپیلوں پر الیکشن ٹربیونل کا فیصلہ جاری.   

عاقب جاوید شاہین آفریدی کے گرویدہ 

ویب ڈیسک
29 Aug, 2021

29 اگست ، 2021

ویب ڈیسک
29 Aug, 2021

29 اگست ، 2021

عاقب جاوید شاہین آفریدی کے گرویدہ 

post-title

لاہور:سابق ٹیسٹ کرکٹر  اور لاہور قلندرز کے ہیڈ کوچ عاقب جاوید کا کہنا ہے کہ فاسٹ بولر شاہین شاہ آفریدی میں بہت بڑا سپر  اسٹار  بننے کے لیے سب کچھ ہے اور  ان کا بہترین بولر  بننے کا سفر کامیابی سے جاری ہے۔
سابق ٹیسٹ کرکٹر عاقب جاوید نے کہا کہ دنیا میں اس وقت جو  بولرز  تیزی سے آگے آ رہے ہیں ان سب میں شاہین شاہ آفریدی سب سے زیادہ زبردست ہے، وہ بہت کچھ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ  شاہین کا  مکینیکل ایکشن ہے، ینگ ایج میں تینوں فارمیٹ کھیل رہا ہے، انہیں آرام کا موقع نہیں مل رہا یا انہیں آرام نہیں دیا جا رہا لیکن اس کے باوجود شاہین نے خود کو بہت زیادہ امپروو کیا ہے۔
عاقب جاوید نے کہا کہ  شاہین شاہ آفریدی کا سفر جاری ہے  اور  انہیں  قد کی وجہ سے بہت مدد مل رہی ہے، اس نے  نئے گیند سے سوئنگ کرنا  بھی سیکھ لیا ہے اور اسے لمبے اسپیل کرنا  بھی آگئے ہیں، اس لیے میں کہتا ہوں کہ شاہین شاہ آفریدی میں سپر اسٹار بننے کے لیے سب کچھ ہے۔
ویسٹ انڈیز کے خلاف ٹیسٹ سیریز  برابر  ہونے کے بارے میں عاقب جاوید نے کہا کہ ویسٹ انڈیز میں پچز  اتنی آسان نہیں تھیں، دوسرے ٹیسٹ میں فواد عالم کی غیر معمولی اننگز کی وجہ سے پاکستانی ٹیم کھیل میں واپس آئی۔
انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کی بیٹنگ کا مسئلہ نیا نہیں ہے، یہ مسئلہ بہت پرانا چلا آرہا ہے، اس کا ایک ہی حل ہے کہ اے ٹیم مستقل ہو جو مشکل کنڈیشنز میں آسٹریلیا، انگلینڈ، نیوزی لینڈ اور ساتھ افریقا میں کھیلے، اس کے ساتھ ساتھ  ٹورز  باقاعدگی سے ہوں، اگر ایسا نہیں ہو گا تو  پھر یہ مسئلہ چلتا رہے گا۔


 


APNN نیوز، APNN گروپ یا اس کی ادارتی پالیسی کا اس تحریر کے مندرجات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

APNN News, the APNN Group or its editorial policy does not necessarily agree with the contents of this article.


عوامی بحث (0) تبصرے دیکھنے کے لئے کلک کریں Public discussion (0) Click to view comments
28 / 5 / 2021
Monday
1 : 23 : 31 PM